Eid Poetry in Urdu | Eid Greeting SMS Images & Wishing |

Eid Poetry in Urdu & Hindi gets from here. We have available unique collections of Eid Shayari in Urdu 2 lines Quotes. Eid greetings message available. Read and copy eid ul fitr poetry in Urdu message, SMS /Status and with images/ pics and share on social media and What’s App friends.

Latest Eid ul fitr sms wishes Urdu and status / quotes uploaded on Facebook and Instagram. Find Here the new collection of Urdu and Hindi poets. Our team daily upload all type of poetry in this site. You can find your favorite poetry on this blog and share it with your loved ones. We hope you liked our collection. If you liked Eid Poetry For Friends 2 lines English, please let us know by commenting below. Android Eid Quotes in Urdu download for laptop and mobile. Urdu poetry website and all unique sher available here.

eid ghazal poetry in urdu

eid ghazal poetry in urdu


❤پابندیاں لگا رکھی ہیں دیدار پر#

##شرط یہ ہے کہ پہلے عیدی دو

 

 

❤وہ بات کرنے پہ ہی راضی نہیں#
❤#اور ہم عید پہ ملنے کی حسرت لیے بیٹھے ہیں

 

 

#

#ایسا کرو جاناں، اس عید پہ ہم پر قربان ہو جائیں#❤
❤#تمہاری قربانی ہو جائیگی، اور ہماری عید#

 

 

 

 

اس سے ملنا تو اسے عید مبارک❤❤ ….#کہنا
یہ بھی کہنا کہ مری عید مبارک کر❤❤….# دے

 

 

 

کوئی اتنا چاہے ہمیں تَو بتانا#❤#
#❤#کوئی تمہاری فکر کرے تَو بتانا

عید مُبارک تَو ہر کوئی کہہ دیتا ہے#❤#
#❤#کوئی ہمارے انداز میں کہے تَو بتانا

 

 

 

 

عید …# کا دن ھے اور دل پھر بھی اداس ھے❤
نہیں معلوم کس کے آنے کی امید و آس ھے

#❤#اے دل ! جھوٹی تسلی کیوں دیجیئے بھلا خود کو
❤%❤%جبکہ کسی کے نہ آنے کی ہر امید بکواس ھے

 

 

 

عید آتی ہے ہر سال مگر عید پہ وہ رونق نہیں آتی#❤#
%❤%کیونکہ وہ بچپن والی عید اب نہیں آتی

 

 

 

 

زندگی کا حال بھی عید جیسا ہو گیا ہے❤
❤خوشیاں بھی سال میں اک بار دستک دیتی ہیں

 

 

 

 

##عید قربان ھے دھوم سے منائیں گے❤
پھر سے تکےبوٹی کباب ہم کھائیں گے

@مدتوں پڑی ھے عادت مانگ کر کھانا
ابکی بار بھی شاپر لیکر ہر گھر جائیں گے

سوچا ھے اب کی بار اسدخود سے حصہ کرنا##
❤آخر کب تلک اپنے دامن مفلسی فھلائیں گے

 

 

عید قربان ھے دھوم سے منائیں گے#❤#
پھر سے تکےبوٹی کباب ہم کھائیں گے

…..❤مدتوں پڑی ھے عادت مانگ کر کھانا
ابکی بار بھی شاپر لیکر ہر گھر جائیں گے

سوچا ھے اب کی بار اسدخود سے حصہ کرنا
#❤#آخر کب تلک اپنے دامن مفلسی فھلائیں گے

 

 

 

پھر دکھاوے کا تبسم لانا پڑے گا#❤#
#❤#عید پہ مجھ کو مسکرانا پڑے گا

 

 

 

اے ہوا تو ہی اسے ❤عید مبارک کہیو%%
##اور کہیو کہ کوئی یاد کیا کرتا ہے

 

%❤%کتنی مستانہ سی تھی عید مرے بچپن کی❤❤
اب خیالوں میں بھی لاتا ہوں تو کھو جاتی ہے

ہم کبھی عید مناتے تھے منانے کی طرح
اب تو بس وقت گزرتا ہے تو ہو جاتی ہے

ہم بڑے ہوتے گئے عید کا بچپن نہ گیا
❤❤یہ تو بچوں کی ہے بچوں ہی کی ہو جاتی ہے#❤#

 

 

 

گائے کے مقابل بکرا دنبہ ہو گیا%❤%
#❤#کیا ہی عید سے پہلے جانور مہنگا ہو گیا

خاک منائیں عید قربان اس حالت میں
%❤%جب جانور پہنچ سے دور اپنے توبہ ہو گیا۔#❤#

 

 

 

 

صدقے ترے اے روح ادا پیک❤ لطافت
خوش آئے ترے حسن کو یہ کیف کی ساعت

یہ تحفۂ اشعار ہے نذرانۂ الفت❤اے جان حیا جان وفا عید مبارک

 

 

 

..چلو کہ روتے ہوؤں کو ہنسا کے عید منائیں#❤#
کسی کے درد کو اپنا بنا کے❤ عید منائیں

دلوں ❤سے اپنے عداوت مٹا کے عید منائیں
#❤#کسی کے لب پہ تبسم سجا کے عید منائیں

 

 

 

خود کی ہی قربانی ہے##
مجھ کو❤ عید منانی ہے

 

 

 

 

#❤#چلو ہم❤ عید منائیں کہ جشن کا دن ہے%%
خوشی کے گیت سنائیں کہ جشن کا دن ہے

رخوں پہ پھول کھلائیں کہ جشن کا دن ہے
%❤%دلوں میں پریت جگائیں کہ جشن کا دن ہے#❤#

 

 

 

آ جائے وہ ملنے تو مجھے عید مبارک❤
مت آئے بہ ہر حال اسے عید مبارک

ایسا ہو سب انسان ہوں❤ خوش اتنے کہ ہر روز
اک دوسرے سے کہتا پھرے عید مبارک

ہاں مجھ سے جسے جس سے مجھے جو بھی گلہ ہو
آباد رہے شاد رہے عید مبارک

تنہائی سی تنہائی کہ دیوار بھی ششدر
اب کھل کے کہے یا نہ کہے ##عید مبارک

سرگوشی نے پتھر کو سبق یاد دلایا
پانی نے% لکھا آئینے پہ عید مبارک

❤تم جو مرے شعروں کے مخاطب تھے نہ ہو گے❤
%آخر میں تمہیں صرف تمہے عید مبارک

 

 

 

گائے کے مقابل بکرا دنبہ ہو گیا
کیا ہی عید سے پہلے جانور مہنگا ہو گیا

خاک منائیں عید قربان اس حالت میں
جب جانور پہنچ سے دور اپنے توبہ ہو گیا۔

 

 

 

 

کوئی دیکھتا ہے تو دیکھ لے، مجھے عید مِل❤#❤
❤#❤مِرے پاس آ، مُجھے باقیوں سے شدید مِل

یہ جو عید ہے کوئی ایک پٙل کی خوشی نہیں❤
❤فقط ایک بار ہی صرف کیوں، تُو مزید مِل

 

 

 

 

کہتا تھا نہ مجھ کو پردیس بھیجو ماں%%
اب میرے بغیر کیسے عید مناو گی ماں

سب کے بیٹے جب آئیں گے عید پڑھ کے%
تم دروازے میں کھڑی تکتی رہ جاو ماں

سویاں جب بانٹنے لگو گی محلے میں
تمہاری پلکیں آنسو سے بھیگ جائے گی ماں

##شام تک بھی جب نہ پہنچ پاوں گا گھر
تیرے دل کی دھڑکن جیسے رک سی جائے گی ماں

عید پڑھ کر جب واپس آوں گا ڈیوٹی پہ
%%تسلی یہ دل کو دے کر سو جاوں گا ماں

 

 

عید آئے گی ہمیشہ تو پریشاں ہوں گے❤
پل خوشی کے جو دیکھیں گے تو حیراں ہوں گے

تجھ کو کھو دیں گے جو ایسے کبھی سوچا نہ تھا##
لمحے خوشیوں کی بھی آئیں گے تو گراں ہو گے

منسلک تجھ سے ہی تھیں اپنی وہ خوشیاں ساری
تو نہیں لال تیرے کیسے شادماں ہوں گے

تیری یادوں نے تو ماں خوں کو بھی نچوڑ دیا
خشک آنکھوں سے بھلا اشک کیسے رواں ہوں گے

ہم کو معلوم ہے تجھ سا نہ کوئی اپنا ہے%❤%
%%یہ سہارے تو بس کچھ دیر کے مہماں ہوں گے

تیری یادیں تو% سہارا ہے میرے جیون کا
یہ نہ ہوں گی تو شب و روز ویراں ہوں گے%❤%

اپنا جیون جو ہے سلیقے سے اس دنیا میں
تیری تربیت کے کیوں نہ قدرداں ہوں گے

%%اپنی جنت کو بھی چاہیں گے تیری قربت میں
ورنہ بہشت میں بھی جائیں گے تو نالاں ہوںگے

اب تو خواہش ہے% تیری آغوش کی اس عالم میں
ابدی مل جائے گی تو پھر نہ جدا ہوں گے

خوش میں دیکھوں گا عمر❤ فردوس بریں میں ماں کو
%%خواب میرے بھی کبھی مجھ پر مہربان ہوں گے

Leave a Reply

Your email address will not be published.

*