Faiz Ahmad Faiz poetry 2 Line & shayari , Nazam in urdu font

Posted by
Spread the love

Faiz Ahmad Faiz was the greatest poet in Urdu poetry after Allama Iqbal and  Ghalib. Faiz Ahmad Faiz was born on 13 February 1911 in Sialkot. Faiz Ahmad Faiz has done MA in English and Arabic. Ahmad Faiz has completed 8 books and collection of words.he was flaunt in 6 books included Russian And Persian. Faiz has included the story of Mehboob’s love and hijar in his poetry.

top famous sher of Faiz Ahmad Faiz 2 line Shayari……

ہم ایک عمر سے واقف ہیں اب نہ سمجائو
کہ لطف کیا ہے مرے مہرباں ستم کیا ہے

                          فیض احمد ٍفیض     

He was an active member of the progressive movement and raised his voice for the oppressed. he was awarded many awards in which Nishan Imtiaz Pakistan was awarded in 1990. it was a short biography of Faiz Ahmad Faiz. we provided lots of collection of Faiz nazam poetry and Shayari available here for you. famous nazam of Faiz hum dekhenge in Urdu font read here and copy & share with friends. click here bully shah poetry 

here down Faiz Ahmad Faiz Shayari collection 2 line and images beautiful available

ہم بھی دیکھے گئے

لازم ہے کے ہم بھی دیکھے گئے
وہ دن کے جس کا وعدہ ہے
جو لوح ازل میں لکھا ہے
جو ظلم او ستم کے کوہ گراہ
روئی کی طرح اُڑ جائے گئے
ہم محکومان کے پائوں تلے
جب دھرتی دھٹر دھٹر دھٹکے گی
اور اہل حکم کے سر اوپر
جب بجلی کڈ کڈ کٹکے گی
جب ارض خدا کے کعبہ سے
سب بت اٹھائے ھائے گئے
ہم اہل سفہ مردود ہرم
منسب پے بٹھائے جائے گئے
سب تاج اچھالے جائے گئے
سب تکت گرائے جائے گئے
بس نام رہے گا ﷲ کا
جو غائب بھی ہے حاضر بھی
جو منطر بھی ہے ناظر بھی
اُٹھے گا انل حق کا نعرہ
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہوں
اور راج کرے گی خلقے خدا
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہوں

 

 

faiz ahmad faiz best poetry

Faiz Ahmad Faiz best poetry 

 

ہم ایسے سادہ دلوں کی نیاز مندی سے
بتوں نے کی جہاں میں خدائیاں کیا کیا

Hum Axy Xada Dilo Ki Niaz Mandi Xy

Buton Ny Ki Jaha Mai Khdaia Kya Kya

 

faiz ahmad faiz poetry love for you

faiz ahmad faiz love poetry for you 

 

ہم سے کہتے ہے چمن والے غریبان چمن
تم کوئی اچھا سا رکھ لو اپنے ویرانے کا نام

Hum Xy Kahty Hai Chaman Waly Girban Chaman

Tum Kwui Acha Xa Rakh Lo Apny Werany Ka Namm

 

faiz ahmad faiz poetry love guru

faiz ahmad faiz poetry love guru

اور بھی دکھ ہے زمانے میں محبت کے سوا
راحتیں اور بھی ہیں وصل کی راحت کے سوا

Or B Dukh Hai Zamany Mai Muhabbat Ky Sawa

Rahty Or B Hai Waxal Ki Rahat Ky Sawa

 

faiz ahmad faiz shayari on life

Faiz Ahmad Shayari on life 

 

آئے تو یوں کہ جیسے ہمشیہ تھے مہربان
بھولے توں یوں کہ جیسے کبھی آشنا نہ تھے

Ay To Yu Ky Jaxy Hamexha Thy Mahrban

Bohly To Yu Ky Jaxy Kabhi Axhna Na Thy

 

faiz ahmad faiz two line shayari urdu

Faiz Ahmad Faiz beautiful poetry

               

تیری امید تیرا انظار جب سے ہے

نہ شب کو دن سے شکائیت نہ دن کو شب سے

Tari Umed Tera Intazar Jab Xy HAi

Na Xhab Ko Din Xy Xhaqyat Na Din Ko Xhab Xy

 

faiz ahmad faiz two line shayari

faiz ahmad faiz nazam hum dakhegy 

         نہیں نگاہ میں منزل جستجو
نہیں وصال میسر تو آرزو ہی سہی

Nahi Niga Mai Manzi Jostjo

Nahi Waxal Mayaxar to Arzo He Xahi

 

faiz ahmad faiz

Faiz Ahmad Faiz poetry sad face 

         

دل نہ امید تو نہیں ناکام ہی تو ہے
لمبی ہے غم کی شام مگر شام ہی تو ہے

Dil Na Umeed To Nai Nakam He To Hai

Lambi Hai Gam Ki Xham Magar Xham He To Hai

 

faiz ahmed faiz beautiful poetry

faiz ahmad faiz 2 line shayari 

آپ کی یاد آتی رہی رات بھر
چاندنی دل دکھاتی رہی رات بھر

Ap Ki Yad Ati Rahi Rat Bhar

Chandni Dil Dikhati Rahi Rat Bhar

 

faiz ahmed faiz ghazal

 

امید یار نظر کا مزاج درد کا رنگ
تم آج کچھ بھی نہ پوچھو کہ دل اداس بہت ہے

Umeed Tar NAzar Ka Mazaj dard ka rang

Tum Aj Kuch Na Pucho Ky Dil Udax Boht Hai

 

faiz ahmed faiz nazam hum dekhenge

 

صبح پھوتی توآسماں پہ ترے
رنگ رخسار کی پھوہار گری
رات چھائی تو روئے عالم پر
تیری زلفوں کی آبشار گری

Suba Photi To Axman Py Tery

Rang Rukjxar  Ki Puhar Giri

Rat Chai To Roay Alam Par

Tari Zulfo Ki Abxhar Giri

 

faiz ahmed faiz poetry on love

 

تم آئے ہو نہ شب انظار گزری ہے
تلاش میں ہے سحر بار بار گزری ہے

Tum Ay Ho Na Xhab Intzar Guzri Hai

Talaxh Mai Hai Xahar Bar Bar Guzri Hai

 

faiz ahmed faiz poetry sad face

 

آواز میں ٹھرائو تھا آنکھوں میں نمی تھی
اور کہہ رہا تھا میں نے سب کچھ بھلا دیا

Awaz Mai Tahrao Tha Ankhon Mai Nami Thi

Or Kah Raha THa Mai Ny Sab Kuch Bukla Dia

 

urdu poetry

 

کتنی حسرت تھی کہ انجام بدل جائے گا
    آخری ورک کئی بار پلٹ کے دیکھا

Kitni Haxrat Thi Ky Anjam Badal Jay Ga

Akhri Wark Kai Bar Palat Ky Dakha

 

Faiz Ahmad Faiz is one of the most popular poets of our time. when Faiz’s poetry came to prominence in 1936, the progressive moment had begun. The main purpose of this was to create public etiquette and make the people realize their problems and rights.there were two parts to Faiz poetry romantic and political. Faiz Ahmad Faiz was a realist post and he was not a man living in a dream world. Faiz was a revolutionary poet. The batter looks at faiz love poetry as a reflection of true feelings and is a perfect example of love.

فیض احمد فیض‌کی تصانیف

نقش فریادی….1941
دست صبا….1952
زنداں نامہ….1956
دست تہ سنگ —1965
سروادی سینا—–1971
شام شہریاراں
دل مرے مرے مسافر—-1981
غبارایام
نسخہ ہائے وفا (کلیات) —-1983
میزان (تنقیدی مضامین کا مجموعہ)…1962

 


Spread the love

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*