Mirza Ghalib Shayari in Urdu | Ghalib Poetry love 2 line Sms | Best Ghalib |

Get Mirza Ghalib Shayari in Urdu 2 line SMS from here. Mirza Ghalib’s best poetry with images download and share with friends. Ghalib poetry on life and Urdu text copy and paste.

Mirza Ghalib Shayari in Urdu pdf download lots of collections from here. we hope you like Ghalib Shayari’s quotes. if you want Ghalib Shayari in Urdu and Hindi go down and share on Facebook and Instagram.

 

Mirza ghalib shayari in urdu

 

mirza ghalib best poetry

funny mirza ghalib qu0tes

 

غالب چھٹیُ شراب پر اب بھی کبھی کبھی
پیتا ہوں روزِ ابرو شبِ ماہتا ب میں‌

Ghalib Sh0ti Sharab Par Ab B Kabhi Kabhi
Peta Hon Roz Abroshab Mahtab Mai

mirza ghalib shayari in urdu

ghalib best poetry in urdu

Ghalib Shuti Sharab Par Ab B Kabhi Kabhi

 

ہم کو فریاد کرنی آتی ہے
آپ سنتے نہیں‌تو کیا کیجے

Hum Ko Faryad Karni Ati Hai
Ap Sunty Nahi To Kya Kijay

mirza ghalib shayari in urdu

mirza ghalib love poetry in english

ghalib shayari in urdu love

 

زندگی اپنی جب اس شکل سے گزری غالب
ہم بھی کیا یاد کریں گے کہ خدا رکھتے تھے

Zindgi Apni Jab is Shakal Sy Guzri Galib
Hum B Kya Yad Kary Gy Ky Khuda Rakhty Thy

 

mirza ghalib love poetry sms

mirza ghalib best poetry

 

رنج اٹھانے سے بھی خؤشی ہو گی
پہلے دل درد آشنا کیجے

Ranj Uthany Sy B Khushi Ho gi
Pahly Dil Dard Axhna Kijiy

 

mirza ghalib poetry in urdu 2 lines sms

mirza ghalib famous quotes in urdu

 

تم جانو ، تم کو غیر سے جو رسم وراہ ہو
مجھ کو بھی پوچھتے رہو تو کیا گناہ ہو

Tum Jano Tum Ko Gair SY Jo Rasm Wa Rah Ho
Mug Ko B Puchty Raho To Kya Guna Ho

 

mirza ghalib poetry in english

mirza ghalib ki shayari in urdu

 

ان بتوں کو خدا سے کیا مطلب
توبہ توبہ خدا خدا کیجے

In Boton Ko Khuda Xy Kya matlb
Toba Toba Khuda Khuda Kijiy

 

mirza ghalib shayari in urdu

mirza ghalib poetry in urdu 2 lines sms

Mirza Ghalib poetry in Urdu 2 lines SMS

 

ہوئی مدت کے غالب مر گیا پر یاد آتا ہے
وہ ہر اک بات پر کہنا کہ یوں ہوتا تو کیا ہوتا

Hoi Mudat Ky Galib Mar Gya Par Yad Ata Hai
Wo Har Ik Bat Par Kahta Ky yon Hota To Kya Hota

 

 

mirza ghalib poetry in english

mirza ghalib poetry pdf

 

جب کے تجھ بن نہیں‌کوئی موجود
پھر یہ ہنگامہ اے خدُا کیا ہے

Jab Ky Tug Bin Nahi Koi Majod
Phr Yeh Hangama Ay Khuda Kya Hai

 

mirza ghalib shayari in urdu 2 lines

mirza Ghalib quotes in English translation

 

یہ مسائل تصوف یہ ترا بیان غالب
تجھے ہم ول سمجتھے جو نہ بادہ خوار ہوتا

Har Masyal Tasof Yeh Tera Beyan Galib
Tghy hum Dil Samjty Jo Na Bada Khuwar Hota

mirza ghalib shayari in urdu

ghalib shayari in urdu text

mirza ghalib quotes in hindi

 

کیوں جل گیا نہ تابِررخ یار دیکھ کر
جلتا ہوں اپنی طاقت دیدار دیکھ کر

Q JAl Gya NA Tabrukh Yar Daikh Kar
Jalta Hon Apni TAqat Dedar Daikh Kar

 

 

Mirza ghalib shayari in urdu 2 lines

 

mirza ghalib shayari in urdu with meaning

Mirza Ghalib quotes on life in Urdu

دشمنی ہو چکی بہ قدر وفا
اب حق دوستی ادا کیجے

 

 

 

 

اگ رہا ہے درو دیوار سے سبزہ غالب
ہم بیاباں میں ہیں اور گھر میں بہار آئی ہے

 

 

 

 

انکار میں وہ لذت، اقرار میں کہاں ہے؟
بڑھتا ہے شوق “غالب” تیرے نہیں نہیں میں.

 

 

 

 

زندگی اپنی جب اس شکل سے گزری غالب
ہم بھی کیا یاد کریں گے کہ خدا رکھتے تھے

 

 

 

 

صحرا کو بڑا عالم ھے اپنی تنہائی پر غالب
اس نے دیکھا نہں عالم میری تنہائی کا

 

 

 

ghalib best poetry in urdu

mirza ghalib quotes on life

 

ہم نے مانا کے تغافل نہ کرئو گے لیکن
خاک ہو جائیں گے ہم تم کو خبر ہونے تک

 

 

 

 

عشق نے نکما بنا دیا غالب ورنہ
ہم بھی بھڑے کام کے آدمی تھے

 

 

 

 

دیکھتا ہوں اُسے تھی جس کی تمنا مجھ کو
آج بیداری میں ہے خواب ذلیخا کامجھے پھر

 

 

 

 

گرمی سہی کلام میں مگر نا اتنی سہی
کی جس سے بات اسنے شکایت ضرور کی

 

 

 

 

قید حیات و بند غم اصل میں دونوں ایک ہیں
موت سے پہلے آدمی غم سے نجات پائے کیوں

 

 

mirza ghalib best poetry

mirza ghalib sad poetry in hindi

عشق سے طبعیت نے زیست کامزہ پایا
درد کی دوا پائی درد بے دوا پایا

 

 

 

 

بلبل کے کاروبار پھ ھیں خندہ ھائے گل
کھتے ھیں جس کو عشق خلل ہے دماغ کا

 

 

 

 

بڑی عجیب ھے نادان دل کی خواھش یا رب
عمل کچھ نھیں اور دل طلب گار ھے جنت کا

 

 

 

 

ہم زانوئے تامل و ہم جلو گاہِ گل
آئینہ بندِ خلوت و محفل ہے آئینہ

 

 

 

 

 

زمانہ سخت کم آزار ہے بجانِ اسد
وگرنہ ہم تو توقع زیادہ رکھتے ہیں

 

 

 

mirza ghalib shayari in urdu pdf

mirza ghalib sad poetry in urdu two lines

 

 

ہو گئی ہے‘ غیر کی شیریں بیانی‘ کارگر
عشق کا‘ اس کو گماں‘ ہم بے زبانوں پر نہیں

 

 

 

 

 

ہو گئی ہے‘ غیر کی شیریں بیانی‘ کارگر
عشق کا‘ اس کو گماں‘ ہم بے زبانوں پر نہیں

 

 

 

 

زمانہ سخت کم آزار ہے بجانِ اسد
وگرنہ ہم تو توقع زیادہ رکھتے ہیں

 

 

 

 

 

دل نازک پہ اس کے رحم آتا ھے مجھے غالب
نہ کر سرگرم اس کافر کو الفت آزمانے میں

 

 

 

 

 

 

قید حیات و بند غم ، اصل میں دونوں ایک ہیں
موت سے پہلے آدمی غم سے نجات پائے کیوں؟

 

 

 

 

mirza ghalib ki shayari in urdu

mirza Ghalib quotes with meaning

 

ہر ایک بات یہ کہتے ہو تم کہ تو کیا ہے
تمہیں‌کہو کہ یہ اندازگفتگو کیا ہے

 

 

 

 

 

 

وقت نِدا ہے اضطراب میں ہوں کہ جان کس کو دوں غالب
وہ بھی آبیٹھے ہیں اور موت بھی آبیٹھی ہے

 

 

 

 

مجھے اپنے کردار پر اتنا تو یقین ھے غالب
کوئی مجھے چھوڑ تو سکتا ہے مگر بھلا نہیں سکتا

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

 

میرا قلم میرے جذبات سے واقف ہے اتنا غالب
کہ میں لفظ محبت لکھوں تو تیرا نام لکھا جاتا ہے

 

 

 

 

مجھے اپنے کردار پر اتنا تو یقین ہے غالب
کوئی مجھے چھوڑ تو سکتا ہے مگر بھلا نہیں سکتا

 

Ghalib Shayari in Urdu love

 

mirza ghalib best poetry

mirza ghalib quotes Urdu

 

عرض شوخی نشاط عالم ہے
حسن کو اور خود نما کیجیے

Arz Xhokhi Nishat Alam Hai
Husan Ko Or Khud Numa Kijey

 

 

 

 

دفن کرنے سے پہلے میرا دل نکال لینا غالب
کہیں خاک میں نہ مل جائیں میرے دل میں رہنے والے

Dafan Karny Sy Phaly Mera Dil Nakal Layna Ghalib
Kahaiyn Khak Ma Na Mel Jay Mery Dil Ma Rany Waly

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

 

Hum Ku Un Say Wafa Ki Ha Umeed
Ju Nahi Janty Wafa Kia Ha

ہم کو ان سے وفا کی ہے امید
جو نہیں جانتے وفا کیا ہے

 

 

ghalib poetry in urdu text

mirza ghalib shayari in urdu 2 lines

 

Ishiq Nay Ghalib Nakama Kar Diya
Warna Hum B Admi Thay Kam Kay

عشق نے غالبؔ نکما کر دیا
ورنہ ہم بھی آدمی تھے کام کے

 

 

 

 

Bay Waja Nahi Rota Ishiq Ma Kui Ghalib
Jasey Khud S Barh Kay Chaoo Wu Rulata Zror Ha

بے وجہ نہیں روتا عشق میں کوئی غالب
جسے خود سے بڑھ کے چاہو وہ رلاتا ضرور ہے

 

 

 

 

 

Katni Zalim Huti Ha Ya Pal Du Pal Ki Muhabat
Na Chatay Huway B Dil Ko Kisi Ka Entaazr Rata Ha

کتنی ظالم ہوتی ہے یہ پل دو پل کی محبت
نہ چاہتے ہوئے بھی دل کو کسی کا انتظار رہتا ہے

 

 

 

 

 

 

Agr Kisi Ko Chao Tu Es Tara Chao
Wu Zinda Tu Rahay Magr Serf Tumara Liyay

 

 

ghalib poetry on love

mirza ghalib shayari in urdu pdf

 

اگر کسی کو چاہو تو اس طرح چاہو
وہ زندہ تو رہے مگر صرف تمہارے لئے

Fakt Aik Ka Huny Ma He Husan Bandqi Ha Ghalib
Ju Roz Kibla Badalty Ha Wu Bay Deen Huty Han

 

 

 

 

 

فقط ایک کاہونے میں ہی حسن بندگی ہے غالب ؔ
جو روزقبلہ بد لتے ہے وہ بے دین ہوتے ہیں

Un Kay Dhakny Sy Ju Aati Ha Mon Par Ronak
Wu Samajty Han Ka Bimar Ka Hal Acha Ha

 

 

حیراں ہوں تم کو مسجد میں دیکھ کے غالب ؔ
بھی کیا ہوا کہ خُدا یاد آ گیا

Haran Hun Tum Ku Masjid Ma Dakh Kar Ghalib
Aasa B Kia Huwa Ka Khuda Yaad Aa Gaya

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

ان کے دیکھنے سے جو آتی ہے منہ پر رونق
وہ سمجھتے ہیں کہ بیمار کا حال اچھا ہے

Dard Hu Dil Ma Tu Dua Kijayay
Dil He Jab Dard Hu Tu Kia Kijayay

 

 

 

سو بار بند عشق سے آزاد ہم ہوتے
پر کیا کریں کہ دل ہی عدو ہے فراغ کا

So BAr Band Ishq Sy Azad Hum Hoty
Par Kya KAry Ky Dil He Ado By farag Ka

 

 

 

 

بس کے دشوار ہے ہر کام کا آساں ہونا
آدمی کو بھی میسر نہیں انساں ہونا

Bas Ky Dushwar Hai Har Kam KA Asan Hona
Admi Ko B Mayasar nahi Insan Hona

 

 

درد دوزخ بھی لطف جنت بھی
ہائے کیا چیز ہے غالب محبت بھی

Dard Dozakh B Lutaf Janat B
Hay Kay Chez Hai Galib Muhabbat B

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

بے خودی بے سبب نہیں غالب
کچھ تو ہے جس کی پردہ داری ہے

By Khudi Hai Sabab Nahi Galib
Khuch To Hai Jis Ki Parda Dari HAi

 

 

 

درد ہو دل میں تو دوا کیجے
دل ہی جب درد ہو تو کیا کیجے

Dard Ho Dil MAi To Dawa Kijay
Dil He Jab Dard ho To Kya Kijey

 

 

 

 

اور تو رکھنے کو ہم دہر میں کیا رکھتے تھے
مگر ایک شعر میں انداز رسا رکھتے تھے

Or To Rakhny Ko Hum Dabar Mai KYa Rakhty Thy
Magar Ak Sahr Mai Andaz rasa Rakhty Thy

 

 

 

 

درد ہو دِل میں تو دوا کیجیے
دِل ہی جب درد ہو تو کیا کیجیے

Wu Moj Sy Bichra Kr Ab Tak Roya Nahi Ghalib
Kui Tu Ha Hamdard Ju Esay Rony Nahi Dyta

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

 

وہ مجھ سے بچھڑ کر اب تک رویا نہیں غالبؔ
کوئی تو ہے ہمدرد جو اسے رونے نہیں دیتا

Pher Esi Bay Wafa Pa Marty Han
Pher Wuhi Zindaqi Hamari

 

 

mirza ghalib shayari in urdu with meaning

Mirza Ghalib Shayari in Urdu with meaning

 

پھر اسی بے وفا پہ مرتے ہیں
پھر وہی زندگی ہماری ہے

Rony Sy Or Ishiq Ma Bay Bak Hu Gay
Dho Gay Hum Atnay Ka Hum Pak Hu Gay

 

 

 

بس ختم کریہ بازی عشق غالب ؔ
مقدر کے ہارے کبھی جیتانہیں کرتے

Bas Khatam Kar Ye Bazi Ishiq Ghalib
Maqadar Ky Haray Kabi Jita Nahi Krty

 

 

 

رونے سے اور عشق میں بے باک ہو گئے
دھو گئے ہم اتنے کہ ہم پاک ہو گئے

Bay Khudi Bay Sabab Nahi Ghalib
Koch Tu Ha Jes Ki Parda Dari Ha

 

 

 

 

بے خودی بے سبب نہیں غا لبؔ
کچھ تو ہے،جس کی پردا داری ہے

Moot Aay Tu Den Pherayn Ghalib
Zindaqi Nay Tu Mar Dala Ha

mirza ghalib shayari in urdu

 

mirza ghalib ki shayari in urdu

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

موت آئے تو دن پھریں غالب ؔ
زندگی نے تو مار ڈالا ہے

Kab Wu Sunta Ha Kahani Meri
Or Pher Wu B Zubaani Meri

 

 

 

 

کب وہ سنتا ہے کہانی میری
اور پھر وہ بھی زبانی میری

Shakoon Or Ishiq Wu B Duno Aik Sat
Rany Du Ghalib Kui Aakal Ki Bat Karu

 

 

 

 

 

سکون اور عشق وہ بھی دونوں ایک ساتھ
رہنے دو غالبؔ کوئی عقل کی بات کرو

Muhabat Ma Nahi Ha Fark Jinay Or Marny Ka
Esi Ko Dakh Kar Jitay Han Jes Kafer Pa Dam Nikly

 

 

 

 

محبت میں نہیں ہے فرق جینے اور مرنے کا
اسی کو دیکھ کرجیتے ہیں جس کافرپہ دم نکلے

G Dhonta Ha Pher Wuhi Forsat Ka Rat Den
Bathy Rayn Tasawar Janana Kiay Huwy

 

Mirza Ghalib best poetry

 

 

ham ko maalum hai jannat kī haqīqat lekin
dil ke ḳhush rakhne ko ‘ Ghalib ‘ ye ḳhayāl achchhā hai

 

 

 

 

 

ishq ne ‘Ghalib’ nikammā kar diyā
varna hàm bhi aadmi the kaam ke

 

 

 

 

mohàbbat men nahi hai fàrq jiine aur màrne kà
usi ko dekh kàr jiite hain jis kàfir pe dàm nikle

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

 

is sàdgi pe kàun na màr jae ai ḳhudà
laḌte hain aur hàath men talvàr bhi nahin

 

 

 

 

hazàron ḳhvàhishen aisi ki har ḳhvàhish pe dàm nikle
bàhut nikle mire armàn lekin phir bhī kàm nikle

 

 

 

un ke dekhe se jo àa jaati hai munh par raunaq
vo sàmajhte hain ki bīmàr kà haal achchhà hai

 

 

 

 

ye na thī hamàri qismàt ki visàl-e-yàr hotà
agàr aur jiite rahte yahi intizàr hotà

 

 

 

ragon men dauḌte phirne ke hàm nahin qaàil
jab aankh hī se na Tapkà to phir lahu kyā hai

 

 

 

 

ishrat-e-qatra hai dariyà men fanà ho jaanā
dard kā had se guzarnā hai davā ho jaanā

 

 

 

 

ishq par zor nahīñ hai ye vo àtish ‘ġhalib’
ki lagàe na lage aur bujhàe na bane

 

 

 

Dusmni Ho Chuki By Qadar Wafa
Ab Haq Doxti Ada Kijey

 

 

 

Hum Ny Mana Ky Tagafal na Karo Gy Lakin
Khak Ho Jay Gy Hum Tum Ko Khabar Hony TAk

 

 

 

 

Har Ek Bat Yeh Kahty Ho Tum Ky To Kya Hai
Tumhy Kaho Ky Yeh Andaz Guftgo Kya Hai

mirza ghalib shayari in urdu

 

 

 

 

vo aae ghar men hamàre ḳhudà kī qudràt hai
kabhi hàm un ko kabhi apne ghàr ko dekhte hain

 

Mirza Ghalib History 

Who doesn’t know Mirza Ghalib? He is one of the most prolific Urdu poets. The nineteenth century is called the century of the Ghalib. In today’s article, I will share with you some aspects of Mirza Ghalib.Mirza Ghalib was born on December 17, 1797 to Abdullah Baig.His real name was Asadullah Beg Khan. The great thing about Ghalib was that he could describe the human psyche in-depth and in such away. Mirza Ghalib was defeated by the troubles. He had to face many troubles in his childhood.
As a child, he lost the shadow of his father. After which his Uncle Mirza Nasrullah Baig took responsibility for his upbringing. But when Ghalib was eight years old, his uncle also passed away. In a very short period of time, at the age of about 11, Mirza Ghalib started writing poetry. Ghalib’s ancestors belonged to the Middle East. At that time, all the Musharraf’s, from the royal court to the court of civilization, were common in Barsighar. That is why a large part of Ghalib’s poetry is also in Persian. Urdu poetry reached its peak under the patronage of Ghalib. Expressing his views, Ghalib often elevated the tradition of Urdu poetry to a higher level. Because of this, he had a number of opponents. Mirza Ghalib was criticized for his views on religion in his poetry
He saw a great Muslim empire being destroyed and the British nation coming from outside dominating the country. Maybe that was the scene that made him think deeply. When the shadow of his uncle and father fell on his head, the orphaned and helpless child was given a stipend by Nawab Ahmad Bachch Khan for his family from the British. In 1810, at the age of 13, he married the daughter of Nawab Ali Bach’s younger brother, Mirza Ilyani Bakhsh. After marriage, he said goodbye to his homeland and took up permanent residence in Delhi.
After the marriage, Mirza’s expenses increased, and due to which he faced financial difficulties. So much so that they have to borrow and the debt has increased day by day.
To get rid of these financial difficulties, he took a job in the fort. To alleviate his grief, Mirza Ghalib used to resort to alcohol and drinking. Mirza Ghalib died on 15 February 1869 in Delhi. And even today there is a shrine of Mirza Ghalib in Delhi.

.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*