Sahir Ludhianvi Poetry Urdu & Hindi | Sahir Shayari, Ghazal ,SMS, Quotes

Sahir Ludhianvi Poetry in Urdu & Hindi gets from here. We have lots of collections of Sahir Ludhianvi Shayari SMS Quotes Urdu, Punjabi, English and Hindi  text available. Read and Download Sahir Ludhianvi images poetry 2 line Urdu and share on social media and Whats App friends.

We hope u like shero Shayari on Sahir Ludhianvi in Urdu & Punjabi. Here are more Sahir Shayari like Hindi Poetry on sahir ludhianvi poetry in urdu talkhiyan, Sahir Ludhianvi Quotes and Ghazal, Or Nazam foun here. Our team daily uploades all kinds of Poet Shayari. Android phone Poetry two/2 line is available. Download images Shayari for mobile and laptop. Most people copy Shayari for android mobile.

 

Sahir Ludhianvi poetry in Hindi

 

 

sahir ludhianvi best quotes in hindi

sahir ludhianvi nazm

 

کون روتا ہے کسی اور کی خاطر اے دوست
سب کو اپنی ہی کسی بات پہ رونا آیا

kōn rōta hay kisi aur ki khatir ayē dōst
sab kō apni hi kisi baat pay rōna aya

 

حیات اک مستقل غم کے سواکُچھ بھی نہیں شاید
خوشی بھی یاد آتی ہے تو آنسو بن کے آتی ہے

hayat ik mustakil gham kay siwa kuch bhi nahi shayad
khushi bhi yaad aati hay tu ansō ban kay aati hay

 

 

 

 

جو مل گیا اسی کو مقدرسمجھ لیا
جو کھو گیا میں اس کو بھلاتا چلا گیا

jō mil giya issi kō muqadar samjh liya
jō khō giya main us kō bhulata chala giya

 

 

 

کبھی خود پہ کبھی حالات پہ رونا آیا
بات نکلی تو ہر اک بات پہ رونا آیا

kabhi khud pay kabhi halat pay rōna aya
baat nikli tu har ik baat pay rōna aya

 

Sahir Ludhianvi Poetry

 sahir ludhianvi quotes in urdu

sahir ludhianvi poetry in english

 

بہت گھٹن ہے کوئی صورت بیاں نکلے
اگر صدا نہ اٹھے کم سے کم فغاں نکلے

buhat ghutan hay kōi surat biyan niklay
agar sada na uthy kam say kam faghan nikly

 

 

 

جو لطف مے کشی ہے نگاروں میں آئے گا
یا با شعور بادہ گساروں میں آئے گا

jō lutf maē-kashi hay nigarōn main ayē ga
ya bashaōōr bada gusarōn main ayē ga

 

 

برباد محبت کی دعا ساتھ لیے جا
ٹوٹا ہوا اقرار وفا ساتھ لیے جا

barbad muhabat ki dua sath liyē ja
tōta huwa iqrar ē wafa sath liyē ja

 

 

 

ان کے رخسار پہ ڈھلکے ہوئے آنسو توبہ
میں نے شبنم کو بھی شعلوں پہ مچلتے دیکھا

un kay rukhsar pay dhalky huwy ansō tauba
main nay shabnum kō bhi shōlōn pay machalty dēkha

 

Sahir Ludhianvi Poetry

sahir ludhianvi best shayari

sahir ludhianvi poetry in hindi

ہم تو سمجھے تھے کہ ہم بھول گئے ہیں ان کو
کیا ہوا آج یہ کس بات پہ رونا آیا

ham tu samjhy thay ka ham bhōōl gaē haan un kō
kiya huwa aaj yēh kis baat pay rōna aya

 

 

زمیں نے خون اُگلا آسماں نے آگ برسائی
جب انسانوں کے دل بدلے تو انسانوں پہ کیا گُزری

zamēēn nay khōn ugla aasman nay aag barsai
jab insanōn kay dil badly tu insanōn pay kiya guzri

 

 

تم میرے لئے اب کوئی الزام نہ ڈھونڈو
چاہا تھا تمہیں اک یہی الزام بہت ہے

tum mēry liyē ab kōi ilzam na dhōndō
chaha tha tumhain ik yahi ilzam buhat ha

 

 

 

ابھی زندہ ہوں لیکن سوچتا رہتا ہوں خلوت میں
کہ اب تک کس تمنا کے سہارے جی لیا میں نے

abhi zinda hōōn lēkin sōchta rēhta hōōn khalwat main
kay ab tak kis tamana kay sahary ji liya main nay

Sahir Ludhianvi Poetry

sahir ludhianvi poetry hindi

sahir ludhianvi poetry in punjabi

 

وہ افسانہ جسے انجام تک لانا نہ ہو ممکن
اسے اک خوبصورت موڑ دے کر چھوڑنا اچھا

wō afsana jisay anjam tak lana na mumkin hō
issay ik khōbsurat mōrr day kar chōrrna acha

 

جانے وہ کیسے لوگ تھے جن کے پیار کو پیار ملا
ہم نے تو جب کلیاں مانگیں ، کانٹوں کا ہار مِلا

janay wō kaisay lōg thay jin kay piyar kō piyar mila
ham nay tu jab kaliyan mangiin , kantōn ka haar mila

 

تنگ آچُکے ہیں کشمکشِ زندگی سے ہم
ٹھکرا نہ دیں جہاں کو کہیں بے دِلی سے ہم

ttang aa chukay haan kashmakash ē zindagi say haam
thukra na dain jahan kō kahin bay dili say ham

 

یہ راہ اکیلی کٹتی ہے یہاں ساتھ نہ کوئی یار چلے
اُس پار نہ جانے کیا پائیں ، اِس پار تو سب کُچھ ہار چلے

yēh raah akaili kat-ti hai yahan sath na kōi yaar chalay
us paar na janay kiya paain, iss par tu sab kuch haar chalay

 

 

ظلم پھِر ظُلم ہے ، بڑھتا ہے تو مِٹ جاتا ہے
خون پھر خون ہے ، ٹپکے گا توجم جائے گا

zulm phir zulm hai barhta hai tu mit jata hai
khōn phir khōn hai tapkay ga tu jam jayē ga

 

Sahir Ludhianvi Poetry

sahir ludhianvi shayari on dosti

sahir ludhianvi poetry in urdu talkhiyan

ہم غم ذدہ ہیں لائیں کہاں سے خوشی کے گیت
دیں گے وہی جو پائیں گے اس زندگی سے ہم

ham gham zada hain lain kahan say khushi kay gēēt
dain gaiy wahi jō payain gain iss zindagi say ham

 

 

دیکھا ہے زندگی کو کچھ اِتنا قریب سے
چہرے تمام لگنے لگے ہیں عجیب سے

dēkha hai zindagi kō kuch itna qarēēb say
chēhray tamam lagnay lagay hain ajēēb say

 

تیرا مِلنا خوشی کی بات سہی
تجھ سے مل کر اداس رہتا ہوں

tēra milna khushi ki baat sahi
tujh sy mill kēr udas rēhta hōōn

 

ہم جو اِنسانوں کی تہذیب لیے پھرتے ہیں
ہم سا وحشی کوئی جنگل کے درندوں میں نہیں

ham jō insanō ki tēhzēēb liyē phirty hain
ham sa vēhshi kōi janglē kay darindōn main nahi

Sahir Ludhianvi poetry in Urdu

 

sahir ludhianvi poetry in urdu talkhiyan

sahir ludhianvi poetry in urdu

 

تنگ آ چکے ہیں کشمکش زندگی سے ہم
ٹھکرا نہ دیں جہاں کو کہیں بے دلی سے ہم

 

 

 

جو لطف مے کشی ہے نگاروں میں آئے گا
یا با شعور بادہ گساروں میں آئے گا

 

 

 

اہل دل اور بھی ہیں اہل وفا اور بھی ہیں
ایک ہم ہی نہیں دنیا سے خفا اور بھی ہیں

 

 

بہت گھٹن ہے کوئی صورت بیاں نکلے
اگر صدا نہ اٹھے کم سے کم فغاں نکلے

 

 

 

یہ زلف اگر کھل کے بکھر جائے تو اچھا
اس رات کی تقدیر سنور جائے تو اچھا

 

 

 

میں زندگی کا ساتھ نبھاتا چلا گیا
ہر فکر کو دھوئیں میں اڑاتا چلا گیا

 

Sahir Ludhianvi Shayari

 sahir ludhianvi ki zindagi in urdu

sahir ludhianvi poetry pdf

برباد محبت کی دعا ساتھ لیے جا
ٹوٹا ہوا اقرار وفا ساتھ لیے جا

 

 

 

کبھی خود پہ کبھی حالات پہ رونا آیا
بات نکلی تو ہر اک بات پہ رونا آیا

 

 

 

تاج تیرے لئے اک مظہر الفت ہی سہی
تجھ کو اس وادی ء رنگیں سے عقیدت ہی سہی

 

 

 

سوچتا ہوں کےمحبت سے کنارا کر لَوں
دل کو بیگانہء ترغیبِ تمنا کر لوں

 

Sahir Ludhianvi Shayari

sahir ludhianvi poems in urdu

sahir ludhianvi quotes

چند کلیاں نشاط کی چن کر
مدتوں محو یاس رہتا ہوں

تیرا ملنا خوشی کی بات سہی
تجھ سے مل کر اداس رہتا ہوں

 

 

چاند مدھم ہے آسماں چپ ہے
نیند کی گود میں جہاں چپ ہے

Sahir Ludhianvi Poetry in English

 

sahir ludhianvi two line shayari

sahir ludhianvi rekhta in hindi

 

Jhōōt kun bōlain farōgh-ē maslihaat kē naam par
Zindagi pyari sahi lēkin hamain marna tu hai

 

 

Jhōōt tu qatil thēhra us ka kia rōna
Sach nē bhi insaan ka khōn bahaya hai

Sahir Ludhianvi Shayari

sahir ludhianvi poems in english

sahir ludhianvi shayari in english

Dunya Nē Tajurbaat ō Hwadis Ki Shakal Mēin
Jō Kuch Mujē Diya Hai Wō Luta Raha Hun Mēin

 

Kis kō khabar thi, kis kō yaqēēn tha kē aēsy bhi din ayēn gēy
Jēēna bhi mushkil hō ga aur marnay bhi na payēn gēy

 

 

Lē Dē Kēy Apnē Pass Faqt Aik Nazar Tu Hai
Kun Dēkhēn Zindagi Kō Kisi Ki Nazar Sē Ham

 

 

 

Ham Tu Samjhē Thay Kē Ham Bhōl Gayē Hain Un Kō
Kya Hōya Aaj Yē Kis Baat Pē Rōna Aaya

 

 

 

Janē Wōh Kaisay Lōg Thay Jin Kē Pyar Kō Pyar Mila
Hum Nē Tō Jab Kalyan Mangani Kantōōn Ka Haar Mila

 

 

Hayat Ik Mustaqil Gham Kē Siwa Kuch Bhi Nahi Shayad
Khushi Bhi Yaad Aati Hai Tu Aansu Ban Kē Aati Hai

 

 

 

ēhlēy Dil Aur Bhi Hain ēhlēy Wafa Aur Bhi Hain
Aik Hum Hi Nahi Dunya Sē Khafa, Aur Bhi Hain

 

 

Tum Mērē Liyē Ab Kōi Aur Ilzaam Na Dhōndō
Chaha Tha Tumhēn Ik Yēhi Ilzaam Bōhat Hai

 

Sahir Ludhianvi Shayari

sahir ludhianvi quotes in hindi

Sahir Ludhianvi Shayari in Urdu

 

Zamēēn Nē Khōn Ugla Aasman Nē Aag Barsai
Jab Insanōn Kē Dil Badlē Tu Insanōn Pē Kya Guzri

 

 

 

Gham Aur Khushi Mēin Farq Na Mahsōōs Hō Jahan
Mēin Dil Kō Us Muqam Pē Lata Chala Gaya

 

 

Mōhabat Tarq Ki Mēin Nē Grēban Si Liya Mēin Nē
Zamanē Ab Tu Khush Hō Zēhar Yē Bhi Pēē Liya Mēin Nē

 

 

 

Wafa Sha’ar Kayi Hain Kōi Hasēēn Bhi Tu Hō
Chalō Phir Aaj Usi Bēwafa Ki Baat Krēin

 

 

Hazar Barq Giray Lakh Aandhiyan Uthēn
Wō Phōl Khil Kē Rahēn Gēy Jō Khilnē Walē Hain

 

Sahir Ludhianvi Shayari

sahir ludhianvi sher rekhta

Sahir ludhianvi Shayari rekhta

 

Tuj Kō Khabar Nahi Mgar Ik Sadah Lōh Kō
Barbad Kar Dia Tērē Dō Din Kē Pyar Nē

 

 

Apni Tabhaiōn Ka Mujē Kōi Gham Nai
Tum Nē Kisi Kē Sath Mōhabat Nibah Tu Di

 

 

Un Kē Ruksar Par Dhalkē Hōyē Aansō Tōba
Mēin Bē Shabnam Kō Bhi Shōlōn Par Machaltē Dēkha

 

 

Kabhi Khud Pē Kabhi Halat Pē Rōna Aya
Baat Nikli Tu Har Ik Baat Pē Rōna Aya

Jō Mil Gaya Usi Kō Muqadar Samjh Liya
Jō Khō Gaya Mēin Us Kō Bhulata Chala Gaya

Aap Dōlat Kē Tarazōn Mēin Dilōn Kō Tōlēn
Ham Mōhabat Sē Mōhabat Ka Sila Dētē Hain

Sahir Ludhianvi Ghazals

 

sahir ludhianvi shayari on taj mahal

sahir ludhianvi shayari

جو لطف مے کشی ہے نگاروں میں آئے گا
یا با شعور بادہ گساروں میں آئے گا

وہ جس کو خلوتوں میں بھی آنے سے عار ہے
آنے پہ آئے گا تو ہزاروں میں آئے گا

ہم نے خزاں کی فصل چمن سے نکال دی
ہم کو مگر پیام بہاروں میں آئے گا

اس دور احتیاج میں جو لوگ جی لئے
ان کا بھی نام شعبدہ کاروں میں آئے گا

جو شخص مر گیا ہے وہ ملنے کبھی کبھی
پچھلے پہر کے سرد ستاروں میں آئے گا

کبھی خود پہ کبھی حالات پہ رونا آیا
بات نکلی تو ہر اک بات پہ رونا آیا

ہم تو سمجھے تھے کہ ہم بھول گئے ہیں ان کو
کیا ہوا آج یہ کس بات پہ رونا آیا

کس لیے جیتے ہیں ہم کس کے لیے جیتے ہیں
بارہا ایسے سوالات پہ رونا آیا

کون روتا ہے کسی اور کی خاطر اے دوست
سب کو اپنی ہی کسی بات پہ رونا آیا

تاج تیرے لئے اک مظہر الفت ہی سہی
تجھ کو اس وادی ء رنگیں سے عقیدت ہی سہی

میری محبوب ! کہیں اور ملا کر مجھ سے

بزم شاہی میں غریبوں کا گزر کیا معنی
ثبت جس راہ میں ہوں سطوت شاہی کے نشاں
اس پہ الفت بھری روحوں کا سفر کیا معنی ؟

میری محبوب ! پس پردہ تشہیر وفا
تو نے سطوت کے نشانوں کو تو دیکھا ہوتا
مردہ شاہوں کے مقابر سے بہلنے والی
اپنے تاریک مکانوں کو تو دیکھا ہوتا

ان گنت لوگوں نے دنیا میں محبت کی ہے
کون کہتا ہے کہ صادق نہ تھے جزبے ان کے
لیکن ان کے لئے تشہیر کا سامان نہیں
کیونکہ وہ لوگ بھی اپنی ہی طرح مفلس تھے

یہ عمارات و مقابر ، یہ فصیلیں یہ حصار
مطلق الحکم شہنشاہوں کی عظمت کے ستوں
سینہ ء دہر کے ناسور ہیں کہنہ ناسور
جزب ہے ان میں ترے اور مرے اجداد کا خوں

میری محبوب ! انہیں بھی تو محبت ہو گی
جن کی صنائی نے بخشی ہے اسے شکل جمیل
ان کے پیاروں کے مقابر رہے بے نام و نمود
آج تک ان پہ جلائی نہ کسی نے قندیل

یہ چمن زار ،یہ جمنا کا کنارہ ، یہ محل
یہ منقش درو دیوار ، یہ محراب ، یہ طاق
اک شہنشاہ نے دولت کا سہارہ لے کر
ہم غریبوں کی محبت کا اڑایا ہے مزاق

میری محبوب ! کہیں اور ملا کر مجھ س

چاند مدھم ہے آسماں چپ ہے
نیند کی گود میں جہاں چپ ہے

دور وادی میں دودھیا بادل
جھک کے پربت کو پیار کرتے ہیں
دل میں ناکام حسرتیں لے کر
ہم تیرا انتظار کرتے ہیں

ان بہاروں کے سائے میں آ جا
پھر محبت جواں رہے نہ رہے
زندگی تیرے نامرادوں پر
کل تلک مہرباں رہے نہ رہے

روز کی طرح آج بھی تارے
صبح کی گرد میں نہ کھو جائیں
آ تیرے غم میں جاگتی آنکھیں
کم سے کم ایک رات سو جائیں

 

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.

*